وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کی گورنر سندھ عمران اسماعیل سے گورنر ہاؤس میں ملاقات
باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا گیا، جس میں امن و امان کی صورتحال، صوبے کی ترقی اور عوام کے بہتر معیار زندگی کے لئے باہمی تعلقات کو فروغ دینا شامل ہے۔
انہوں نے صوبے میں کرونا وائرس سے ہونے والی بیماری اور احتیاطی تدابیر پر عملدرآمد کا بھی جائزہ لیا اور اس کے پھیلاؤ کی روک تھام کے لئے بھرپور کوششیں تیز کرنے کا فیصلہ کیا۔
گورنر سندھ کی محکمہ پولیس کی پیشہ وارانہ استعداد کے لئیے خصوصی تربیت کے اقدامات اور پولیس کو عوامی خدمت فورس میں تبدیل کرنے کے حوالے سے بھی گفتگو

Governor Sindh, Imran Ismail, visited Pakistan Council of Scientific & Industrial Research (PCSIR) Labs Complex, Karachi.

Governor Sindh, Imran Ismail, visited Pakistan Council of Scientific & Industrial Research (PCSIR) Labs Complex, Karachi.

گورنر سندھ کا پاکستان کونسل آف سائنٹیفک اینڈ انڈسٹریلریسرچ لیبارٹریز کمپلیکس کراچی کا دورہ
کراچی 27جون
گورنر سندھ عمران اسماعیل نے پاکستان کونسل آف سائنٹیفک اینڈ انڈسٹریل ریسرچ (PCSIR) لیبارٹریز کمپلیکس کراچی کا دورہ کیا۔ اس موقع پر کمپلیکس میں شجرکاری مہم کاآغاز کرتے ہوئے گورنر سندھ نے پودا لگایا۔ گورنر سندھ نے کہا کہ وزیر اعظم پاکستان کی کلین اینڈ گرین پاکستان مہم کے وژن پرکاربند ہیں۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت عوام کو صاف پانی، صحت ، تعلیم، سمیت زندگی کی بنیادی سہولیات فراہم کرنے کےلئے تمام وسائل بروئے کا ر لارہی ہے۔ اس ضمن میں پاکستان کونسل آف سائنٹیفک اینڈ انڈسٹریل ریسرچ کا کردار بھی بہت اہمیت کا حامل ہے۔گورنر سندھ نے کہا کہ پی سی ایس آئی آر کاشہر میں الٹرا فلٹریشن پلانٹ نصب کرنے کی پیشکش ایک خوش آئند امر ہے ۔ اس سے قبل ڈی جی PCSIR محمد علیم احمد نے گورنر سندھ کو بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ کمپلیکس کے زیرانتظام 7 ریسرچ سینٹرز جن میں ایپلائڈ کیمسٹری ریسرچ سینٹر، سینٹر فارانوائرومینٹل اسٹڈیز، ایپلائڈ فزکس، کمپیوٹر اینڈ انسٹرومینٹیشن سینٹر، سینٹر فار ڈویلپمنٹ آف لیبارٹریایکوپمنٹ، انجینئرنگ سروس سینٹر، فوڈ اینڈ میرین ریسورسزریسرچ سینٹر اور فارما سیوٹیکل ریسرچ سینٹر کے بارے میں تفصیلات سے آگاہ کیا۔ ڈی جی نے مزید بتایا کہ ریسرچ سینٹرکےتحت تقریباً 6 ہزار مختلف صنعتوں کو ریسرچ اینڈ ڈوپلمنٹ کی سہولیات فراہم کی جارہی ہیں۔ اس کے علاوہ ایگریکلچر فارماسیوٹیکل، سولڈ ویسٹ مینجمنٹ، ویسٹ واٹر پلانٹ، لیباریٹری واٹر پیوریفیکیشن سسٹم، الڑا فلڑیشن ڈرنکنگ واٹرپلانٹ، انڈور ایئر پیوری فائر، تعلیمی اداروں اور دیگر شعبوں میں بھی ریسرچ اینڈ ڈویلپمنٹ کی خدمات دی جارہیں ہیں۔ انہوں نےگورنر سندھ کو مزید بتایا کہ ادارے کے تحت تھر کے 22ہزارکلومیٹر کے رقبہ پر پانی کی کوالٹی کو جانچنے کے لئے میپنگ کی گئی ہے، پاکستان سائنس فاﺅنڈیشن کے پروجیکٹ کے تحتچھاچھرو کے علاقے میں ٹرٹمنٹ پلانٹ نصب کیا گیا ہے، جس کےذریعے 1500 گیلن پانی فی گھنٹہ حاصل کیا جا رہا ہے، جو کہ 4 ہزار سے زائد لوگوں کو مستفید کر رہا ہے۔ بعد ازاں ڈی جی PCSIR محمد علیم احمد نے ادارے کی جانب سےگورنر سندھ عمران اسماعیل کو یادگاری شیلڈ بھی پیش کی۔