گورنر سندھ عمران اسماعیل کی دعوت اسلامی کے مرکز فیضان مدینہ آمد
محفل میلاد النبی ﷺ کی پر نور محفل میں شرکت
فیضان مدینہ کے طالب علموں اور علمائے کرام سے ملاقات
عید میلاد النبی ﷺ ہمارے دلوں کے بہت نزدیک ہے۔ گورنر سندھ
ہمارے پیارے نبی ﷺ نے اپنی پوری زندگی میں محبت بانٹی۔ گورنر سندھ

Governor Sindh Imran Ismail says, will try to resolve the issues and help to bring the cable operators and K-Electric on the same page.

Governor Sindh Imran Ismail says, will try to resolve the issues and help to bring the cable operators and K-Electric on the same page.

KARACHI, Aug 26: Governor Sindh Imran Ismail refuted news about any connections of PTI with the Abraaj Group the owner of K-Electric.
Talking to media in a presser after meeting with a seven-member delegation of Cable Operators Association which called on him at the Governor House, he said that such news were baseless and mere rumors.
Imran Ismail said that comparing Prime Minister Imran Khan with other politicians was injustice and the world was acknowledging that the country now was in the hands an honest leadership.
Responding to a query, he said that lifting of garbage from the city was the responsibility of KMC and the provincial government also.
He said that he would play his role in payments of compensation to the affected victims of K-Electric.
To another question he replied that he would discuss with the relevant departments for establishment of multiple power supply companies to ensure atmosphere of competition among them which would benefit the consumers.
Earlier, in meeting with delegation of Cable Operators Association led by its Chairman Khalid Arain, the Governor assured that to ensure resolution of genuine concerns of the cable operators he would soon call a high-level meeting in this regard. The Sindh Chief Minister, K-Electric officers and others concerned would be invited to attend the meeting.
Imran Ismail said that cutting the wires and cables of cable operators in the city was not the solution to the issue of electrocution.
The delegation also assured their participation in beautification of the city with removing clumped cables besides pointing out the illegal cable operators. The cable operators requested permission for making a common corridor for cable operators themselves would bear the expenses.

گورنرسندھ عمران اسماعیل سے کیبل آپریٹر کے سات رکنی وفد کی خالد آرائیں کی قیادت میں ملاقات

کیبل آپریٹرز نے اپنے مسائل سے گورنرسندھ کو آگاہ کیا ۔ گورنرسندھ کا مسائل کے فوی حل کے لئے اعلیٰ سطحی اجلاس بلانے کا عندیہ

کراچی اگست 26

  گورنرسندھ عمران اسماعیل سے کیبل آپریٹر ایسوسی ایشن کے سات رکنی وفد نے چیئر مین خالد آرائیں کی قیادت میں گورنرہاﺅس میں ملاقات کی۔ ملاقات میں کیبل آپریٹرز نے اپنے مسائل بتاتے ہوئے یقین دہانی کرائی کہ شہر کی خوبصورتی میں حائل کیبلز کے گھچوﺅں کو سمیٹیں کر انھیں بہتر طریقے سے لگائیں گے ، ساتھ ساتھ غیر قانی کیبل آپریٹرز کی نشاندہی بھی کریں گے ۔ کیبل آپریٹر زنے ملاقات میں درخواست کی کہ انھیں کامن کوریڈور بنانے کی اجاز ت دی جائے جس کے اخراجات بھی وہ خود برداشت کریں گے اس ضمن میں انھیں این او سی بھی درکار ہوتی ہے اس کے لئے متعلقہ اداروں کو پابند کیا جائے کہ وہ این او سی فوری جاری کریں اور روڈ کٹنگ چارجز سے بھی انھیں مستثنیٰ قرار دیا جائے ۔گورنرسندھ نے وفد کے مسائل جلد از جلد حل کرانے کے لئے اعلیٰ سطحی اجلاس طلب کرنے کی یقین دہانی کراتے ہوئے کہا کہ اجلاس میں وزیر اعلیٰ سندھ ، کے الیکٹرک اور دیگر متعلقہ افراد کو مدعو کیا جائے گا تاکہ ان کے مسائل کو سنا جا سکے با الخصوص کرنٹ لگنے سے مرنے والوں کی وجوہات کی نشاندہی بھی کی جاسکے ۔ اس موقع پر گورنرسندھ نے کہا کہ شہر سے کیبل آپریٹر ز کے کیبل کو کاٹنا مسئلہ کاحل نہیں کیونکہ ان وائرز کے ذریعے بنک ، اے ٹی ایم اور دیگر ذرائع ابلاغ آپس میں منسلک ہیں اس ضمن میں ہر اسٹیک ہولڈرز کو اپنی ذمہ داری ادا کرنا ہوگی ۔بعد ازاں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے گورنرسندھ نے کہا کہ الیکٹرک معاہدے کے مطابق جو ڈیویلپمنٹ کا کام کرنا تھا وہ تاحال ان لوگوں نے نہیں کیا حتیٰ کہ سسٹم کو بہتر بنانے کے لئے جو سرمایہ کاری کرنی تھی وہ بھی نہیں کرسکے ۔ ایک اور سوال کا جواب دیتے ہوئے گورنرسندھ نے کہا کہ ابراج گروپ کے الیکٹرک کا مالک ہے اس ضمن میں پی ٹی آئی سے ان کے تعلقات کی خبروں میں کوئی صداقت نہیں،عمران خان کا دیگر سیاست دانوں سے موازنہ کرنا زیادتی ہے دنیا دیکھ رہی ہے کہ پاکستان میں ایک دیانت دار حکومت قائم ہے۔ایک اور سوال کا جواب دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ شہر سے گندگی اور کچرے اٹھانے کی ذمہ داری کے ایم کے ساتھ ساتھ صوبائی حکومت کی بھی ہے ۔معاوضہ کے بارے میں پوچھے گئے ایک سوال پر کہا کہ وہ اس ضمن میں کے الیکٹر کی جانب سے اعلان کردہ معاوضہ فوراً ادا کرنے میں اپنا کردار ادا کریں گے ۔ایک اور سوال کا جواب دیتے ہوئے کہاکہ وہ متعلقہ وزارتوںسے ملٹی پل ڈسٹری بیوشن کمپنیوں کے قیام کے لئے بات کریں گے تاکہ کے الیکٹرک اور دیگر کمپنیوں میں مقابلے کی فضا قائم ہو سکے جس سے عوام کو فائدہ حاصل ہو سکے گا ۔ چیئر مین خالد آرائیں نے بتایا کہ کیبل آپریٹر کے وائر میں بجلی استعمال نہیں ہوتی ہے اس لئے مرنے والے افراد کی ذمہ دار کے الیکٹرک ہے اور شہر میں لگنے والے کنڈوں کی وجہ سے بھی برسات میں لوگوں کی اموات واقع ہوئی ہیں۔