گورنر سندھ عمران اسماعیل کی دعوت اسلامی کے مرکز فیضان مدینہ آمد
محفل میلاد النبی ﷺ کی پر نور محفل میں شرکت
فیضان مدینہ کے طالب علموں اور علمائے کرام سے ملاقات
عید میلاد النبی ﷺ ہمارے دلوں کے بہت نزدیک ہے۔ گورنر سندھ
ہمارے پیارے نبی ﷺ نے اپنی پوری زندگی میں محبت بانٹی۔ گورنر سندھ

Governor Sindh Imran Ismail said that Qingdao had a special status in China’s economy. Cooperation with the city would greatly benefit Pakistan’s economic hub Karachi.

Governor Sindh Imran Ismail said that Qingdao had a special status in China’s economy. Cooperation with the city would greatly benefit Pakistan’s economic hub Karachi.

Karachi (October 28): Vice-Mayor Xue Qingguo of the Chinese city of Qingdao met the Governor of Sindh Imran Ismail at the Governor House.

The meeting discussed matters pertaining to trade, investment and others. 
On the occasion, a Memorandum of Understanding (MoU) was signed between Mayor Karachi Waseem Akhtar and Vice Mayor Xue Qingguo to work on enhancing cooperation in trade, science and technology, cultural, ports, tourism and other fields. 
Chinese delegation including Chairman Board of Investment Zubair Gilani, Leader of the Opposition in Sindh Assembly Firdous Shamim Naqvi, PTI Parliamentary Leader Haleem Adil Sheikh and others attended the ceremony. 
Talking to media after the meeting, the Governor said that the signing of the MoU between Qingdao and Karachi was welcomed. Through this MoU, not only the city of Karachi but the entire province and country would benefit. 
He said Chinese companies were turning to other countries in the region due to rising production costs in China. Pakistan was taking advantage of this opportunity to invite Chinese companies to invest in the country. 
Imran Ismail said that Qingdao had a special status in China’s economy. Cooperation with the city would greatly benefit Pakistan’s economic hub Karachi. 
Responding to a question, he said that the solution to Karachi’s problems was transfer of powers to the mayor. 
To another question about taxes, the Governor made it clear that the present government did not impose any new tax however the government was only ensuring proper collection of already imposed taxes. Expanding the tax net was the most urgent need of the hour.
Replying to a question about economy, the Governor said that Pakistan was the emerging economy of the world. Due to the effective economic policy of the present government, Pakistan would soon become a new economic force. 
Mayor Karachi Waseem Akhtar said that signing of Memorandum of Understanding would benefit the citizens from modern technology.
He said Pak-China friendship would become even more important after the agreement.
The Mayor added that China had set an example of rapid development around the world. We need to take full advantage of China’s advanced technology. 
Waseem Akhtar said that the MoU would take the city to a new path of development.
______________________________________________________

میئر کراچی وسیم اختر اوروائس میئر چنگ ڈاﺅ کے درمیان مفاہمتی یادداشت پر گورنرہاﺅس میں دستخط

چنگ ڈاﺅ کی چائنا کی صنعت میں خصوصی حیثیت ہے ، گورنرسندھ کی میڈیا سے گفتگو

کراچی اکتوبر 28

گورنرسندھ عمران اسماعیل سے چائنا کے شہر چنگ ڈاﺅ کے وائس ایگزیکٹیو میئر کی گورنرہاﺅس میں ملاقات۔ ملاقات میں تجارت ، سرمایہ کاری سمیت دیگر دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا گیا ۔ اس موقع پر میئر کراچی وسیم اختر اور وائس میئر Xue Qingguo کے درمیان مفاہمتی یادداشت پر دستخط ہوئے جس کے تحت تجارت ، سائنس اینڈ ٹیکنالوجی ، ثقافتی ، پورٹس ، سیاحت اور دیگر شعبوں میں مزید تعاون بڑھانے پر کام کیا جائے گا ۔ تقریب میں چائنیز وفد سمیت چیئر مین سرمایہ کاری بورڈ زبیر گیلانی ، سندھ اسمبلی میں قائد حزب اختلاف فردوس شمیم نقوی ، سندھ اسمبلی میں پی ٹی آئی کے پارلیمانی لیڈر حلیم عادل شیخ اور دیگر نے شرکت کی ۔تقریب کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے گورنرسندھ نے کہا کہ چنگ ڈاﺅ اور کراچی کے درمیان تعاون بڑھانے کی یاد داشت پر دستخط خوش آئند ہے۔ اس یاد داشت کے توسط سے نہ صرف شہر کراچی بلکہ پورے صوبے اور ملک کو فائدہ ہوگا۔ چائنا میں پیداواری لاگت میں اضافے کی وجہ سے چائنیز کمپنیوں کا رخ خطے کے دوسرے ممالک کی طرف ہورہا ہے۔ پاکستان اس موقعے سے فائدہ اٹھاتے ہوئے چائنیز کمپنیوں کو پاکستان میں سرمایہ کاری کرنے کی دعوت دے رہا ہے۔ چنگ ڈاﺅ شہر کی چائنا کی معیشت میں خصوصی حیثیت ہے۔ اس شہر کے ساتھ تعاون سے پاکستان کے معاشی مرکز کراچی کو بہت فائدہ ہوگا۔ ایک سوال کے جواب میں گورنر سندھ نے کہا کہ کراچی کے مسائل کا حل میئر کو اختیارات کی منتقلی ہے۔ ٹیکس کے بارے میں کئے گئے سوال پر گورنرسندھ نے واضح کیا کہ موجودہ حکومت نے کوئی نیا ٹیکس نہیں لگایا صرف پہلے سے نافذ ٹیکس کی وصولیابی یقینی بنائی جارہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ٹیکس نیٹ کو بڑھانا وقت کی اہم ترین ضرورت ہے ۔معیشت کے بارے کئے گئے سوال پر گورنرسندھ کا کہنا تھا کہ پاکستان دنیا کی ابھرتی ہوئی معیشت ہے ، موجودہ حکومت کی موئثر معاشی پالیسی کی بدولت بہت جلد پاکستان ایک نئی معاشی قوت بن کر دنیا کے سامنے آئے گا ۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے میئر کراچی وسیم اختر نے کہا کہ چنگ ڈاﺅ اور کراچی کے درمیان سرمایہ کاری ،تجارت ، کاروبار اور دیگر امور کے معاہدوں کی یادداشت پر دستخط سے شہری جدید ٹیکنالوجی سے بھرپو ر مستفید ہونگے ، پاک چین عظیم دوستی اس معاہدہ کے بعد مزید اہمیت اختیار کرجائے گی کیونکہ پاک چین معاہدے نہ صرف ملکی سطح بلکہ شہروں کی سطح پر بھی ہو رہے ہیں جو کہ خطہ کی ترقی، عوام کا معیار زندگی اور روزگار کے ساتھ ساتھ غربت کے خاتمہ کے لئے انتہائی ناگزیر ہے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ چین نے دنیا بھرمیں تیزی سے ترقی کرکے ایک مثال قائم کی ہے ہمیں چین کی جدید ٹیکنالوجی سے بھرپور استفادہ حاصل کرنے کی ضرورت ہے آج کے معاہدوں کی یادداشت سے شہر ترقی کی نئی راہ پر گامزن ہو سکے گا ہماری پوری کوشش یہی ہے کہ ملک کے اقتصادی حب کو جدید سہولیات سے آراستہ کیا جائے اس ضمن میں چین کی