گورنر سندھ عمران اسماعیل کا یوم استحصال کشمیر کے موقع پر پیغام
آج ملک بھر میں ریاستی سطح پر یوم استحصال کشمیر منایا جارہا ہے۔
اس کا مقصد اقوام ِ عالم کو یہ باور کرانا ہے کہ 5اگست 2019 کو ہندوستان نے یکطرفہ اقدام کرتے ہوئے غیر قانونی طریقے سے جموں کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرکے وہاں بدترین مظالم کا سلسلہ شروع کیا۔ گورنر سندھ
آرٹیکل 370 کے خاتمے کے بعد ہندوستان ہر حربہ آزما چکا ہے لیکن اہل کشمیر کا جذبہ حریت سرد نہیں ہوا۔ گورنر سندھ
مقبوضہ کشمیر میں مواصلاتی بلیک آوٹ آج بھی جاری ہے۔ عمران اسماعیل
مقبوضہ کشمیر میں کشمیری عوام اپنے بنیادی حقوق سے آج بھی محروم ہیں۔ گورنر سندھ
وزیر اعظم پاکستان نے اقوام متحدہ کے 74ویں اجلاس میں کشمیریوں کا مقدمہ احسن طریقے سے پیش کرکے کشمیریوں کے سفیر کے طور پر آواز بلند کی۔ عمران اسماعیل
آج کے دن پوری پاکستانی قوم اور دنیا میں جہاں جہاں کشمیری بستے ہیں کشمیریوں کے ساتھ کئیے جانے والے استحصال کو اجاگر کریں اور ان کے ساتھ تجدید عہد کریں گے۔ گورنر سندھ
کشمیری عوام آزادی حاصل کرکے رہیں گے اور ہماری حکومت اس عزم و استقلال میں کشمیری بھائیوں کے ساتھ ہے۔ گورنر سندھ

Governor Sindh Imran Ismail and Federal Minister Shafqat Mehmood chaired the session of transitional and conservation committee at Governor House.

Governor Sindh Imran Ismail and Federal Minister Shafqat Mehmood chaired the session of transitional and conservation committee at Governor House.

گورنرسندھ اور وفاقی وزیر شفقت محمود کے زیر صدارت اجلاس
گورنرہاﺅس کے مزید موثر انداز سے استعمال پر تفصیلی بات چیت۔گورنرہاﺅس عوام کے لئے کھولنے پر پذیرائی حاصل ہو رہی ہے۔ گورنرسندھ
گورنرسندھ اور وفاقی وزیر شفقت محمود کے زیر صدارت ٹرانزیشنل اینڈ کنزر ویشن کمیٹی کا اجلاس منعقد ہوا۔ اجلاس میں گورنرہاﺅس کے مزید موثر انداز سے استعمال پر تفصیلی بات چیت ہوئی۔ اجلاس میں گورنرسندھ نے بتایا کہ گورنرہاﺅس میں ثقافتی ، سماجی اور دیگر تقریبات کا انعقاد ہوتا رہتا ہے ایگزیکٹیو ٹریننگ پروگرام کے تحت ہاور ڈ یونیورسٹی سرٹیفکیشنز کورسز کے لئے گورنرہاﺅس میں جگہ مختص کی گئی ہے جبکہ پہلہ بیج نے اپنا کورس کامیابی سے مکمل کرلیا ہے جبکہ اسپیشل افراد کے لئے مختلف پروگرامز کئے گئے اس کے علاوہ ا یتیم بچوں کے لیے کارناول کا انعقاد بھی کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ گورنر ہاﺅس عوام کے لئے کھولے جانے کے اقدام کو بیحد پزیرائی حاصل ہو رہی ہے با الخصوص گورنرہاﺅس میں اسکولز کے بچے تاریخی اشیاءسے متعلق آگاہی حاصل کررہے ہیں جس سے ان کی معلومات میں مزید اضافہ ہو رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مختلف کاز کو بھرپور سپورٹ کرنے کے لیے گورنرہاﺅس میں فیسٹول جس میں ادبی فیسٹول بھی شامل ہیں، کا انعقاد کیا جاتاہے، ابھی حال ہی میں پی ایس ایل کے کھلاڑیوں کو بھی گورنرہاﺅس میں مدعو کیا گیا تھا۔بعد ازاں گورنرسندھ اور وفاقی وزیر شفقت محمود نے وفاق کے سپرد ہونے والے نیشنل میوزیم کا دورہ کیا۔ اس موقع پر میوزیم کے انچارج نے تفصیلی بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ نیشنل میوزیم کا قیام 1970 ءمیں عمل میں لایا گیا میوزیم بزنس گارڈن کے وسط میں قائم ہے۔یہ میوزیم 56 ہزار اسکوائر یارڈ پر محیط ہے جس میں سے 3816 اسکوائر یارڈ پر میوزیم قائم ہے اور اس میوزیم میں 11 گیلریز ہیں نایاب پیپرز کی کنزر ویشن بھی یہی ہوتی ہے یہاں ایک آرڈیٹو ریم بھی ہے اس کے علاوہ گندھارا سول لائزیشن ، موہنجوداڑو اورہڑپہ کی تاریخی اشیاءکو بھی یہاں محفوظ رکھا ہوا ہے ، ہندو گیلری ، کوائنز گیلری اور قرآن گیلری بھی یہاں قائم ہیں ، قرآن گیلری میں 10 سے 18 صدی کے قرآن پاک کے نادر و نایاب نسخے موجود ہیں۔گورنر سندھ اور وفاقی وزیر نے میوزیم کے انچارج کو ہدایت کی کہ وہ نادر و نایاب اشیاءکو محفوظ بنانے کے لئے مزید اقدامات کویقینی بنائیں۔ انہوں نے کہا کہ میوزیم کی تزین و آرائش اور برنس گارڈن کی بحالی پر بھی اقدامات کی اشد ضرورت ہے اس ضمن میں وفاقی وزیر نے موقع پر موجود وفاقی سیکریڑی کو بھی ہدایات دیتے ہوئے یہاں موجود قدیم تہزیب سے منسالک نادر و نایاب اشیاءکی حفاظت اور ان کی تحفظ اور بزنس گارڈن کی تزئین و آرائش کےلئے ہر ممکن اقدامات کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔