‏گورنر سندھ عمران اسماعیل کی پاکستان ڈے کے موقع پر مزار قائد پر حاضری
اس موقع پر وزیر اعلی سندھ مراد علی شاہ بھی ہمراہ تھے۔
گورنر سندھ نے بابائے قوم کو خراج تحسین پیش کیا اور مہمانوں کی کتاب میں اپنے تاثرات درج کئے۔

Governor Sindh chairs 28th annual convocation of NED University of Engineering and Technology.

Governor Sindh chairs 28th annual convocation of NED University of Engineering and Technology.

In his presidential address, Governor Imran Ismail said that the economy of the country is improved due to the effective measures taken by the government.

He said that the imports are decreased while exports of the country are increased.

The governor pointed out that the improvement in the economy of the country is also being acknowledged by foreign institutions.

_________________________________________________

این ای ڈی یونیورسٹی کے فارغ التحصیل طلباءو طالبات پاکستان سمیت دنیا کے دیگر ممالک کے اہم عہدوں پر خدمات انجام دے رہے ہیں۔ گورنرسندھ 

موجودہ حکومت کی بہترین معاشی پالیسی کے ثمرات عوام تک پہنچا شروع ہوگئے یونیورسٹی کے28 ویں کانووکیشن کی تقریب سے خطاب

 کراچی دسمبر 07

گورنر سندھ عمران اسماعیل نے کہا کہ نو دہائیوں پر مشتمل تاریخ میں این ای ڈی یونیورسٹی کے فارغ التحصیل طلباءو طالبات نہ صرف پاکستان بلکہ شمالی امریکہ ، یورپ اور آسٹریلیا سمیت پوری دنیا کے دیگر ممالک کے اہم عہدوں پر خدمات انجام دے رہے ہیں اور پاکستان کا نام روشن کررہے ہیں۔ حکومت وقت نے آپ پر بے پناہ ریسورسیز لگائے ہیں ضرورت اس امر کی ہے کہ اعلیٰ تعلیم حاصل کرکے آپ ملک و قوم کو اپنی بہترین خدمات فراہم کریں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے این ای ڈی یونیورسٹی آف انجینئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی کے 28 ویں کانووکیشن کی پروقار تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ تقریب میں وفاقی وزیر برائے تعلیم و پروفیشنل ٹریننگ شفقت محمود، چیئرمین پاکستان انجینئرنگ کونسل انجینئر جاوید سلیم قریشی اور طلباءو طالبات کے والدین کی بڑی تعداد بھی شریک تھی۔
گورنر سندھ نے کہا کہ موجودہ حکومت کی بہترین معاشی پالیسی کے ثمرات عوام کے سامنے آنا شروع ہوگئے ہیں اس ضمن میں بین الاقوامی معاشی ادارے کی جانب سے رپورٹ جاری کی گئی ہے جس میں بتایا گیا ہے کہ 2024 ءمیں دنیا کی 70 فیصد معیشت کا دارومدار جن 20 ممالک میں ہوگا ان میں پاکستان بھی شامل ہے، کاروبار میں آسانیاں فراہم کرنے والے ممالک کی درجہ بندی میں کئی درجے بہتری ظاہر کرتی ہے کہ موجودہ حکومت پر بین الاقوامی سرمایہ کاروں کا اعتماد بڑھا ہے۔ گورنر سندھ نے کہا کہ نوجوانوں انٹر پرینیورز کے لئے کامیاب جوان پروگرام کا آغا کردیا گیا جس کے تحت ہنر مند اور تعلیم یافتہ نوجوانوں کو آسان شرائط پر بلا سود قرضے فراہم کئے جارہے ہیں۔ گورنر سندھ نے کہا کہ ہمارے ملک کی ترقی کا دارومدار جامعات سے فارغ التحصیل ہونہار ، قابل اور با صلاحیت طلباءو طالبات کے ساتھ جڑا ہوا ہے کیونکہ یونیورسٹیز اعلیٰ تعلیم ، تحقیق اور ترقی کے مراکز ہوتے ہیں جن کا براہ راست اثر قومی معیشت پر پڑتا ہے۔ گورنر سندھ نے کہا کہ جامعات سے فارغ التحصیل طلباءو طالبات آج اپنے پروفیشنل کیریئر کا آغاز کرنے جا رہے ہیں اس ضمن میں ان کو ملک و قوم کا مفاد ہر صورت مقدم رکھنا ہوگا۔ گورنر سندھ نے مزید کہا کہ این ای ڈی کا سی پی ای سی (CPEC) یونیورسٹیز کے کنسورشیم کے ذریعہ چینی شہر کی نامور جامعات کے ساتھ قریبی روابط کا قیام ہونا خوش آئند امر ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں موجود انجینئرنگ یونیورسٹیز کے ساتھ ساتھ این ای ڈی یونیورسٹی بھی تحقیقی کاوشوں کو بروئے کار لاتے ہوئے ملک کی معیشت میں اپنا حصہ ڈال رہی ہے، اس ضمن میں جدید ٹیکنالوجی سے وابستہ این ای ڈی یونیورسٹی نے قومی چیلنج کو مدنظر رکھتے ہوئے پہلا واٹر انسٹی ٹیوٹ کا قیام عمل میں لایاجو کہ خوش قابل ستائش ہے۔ گورنر سندھ نے کہا کہ یہ بات قابل فخر ہے کہ این ای ڈی یونیورسٹی میں پی ایچ ڈی اساتذہ کی تعداد میں کافی اضافہ ہوا ہے جن میں سے بیشتر معروف بین الاقوامی یونیورسٹیز میں اپنی خدمات بھی سرانجام دے چکے ہیں، میری خواہش ہے کہ اساتذہ اپنے پورے جوش و جذبے اور محنت کے ساتھ اپنا علم وتجربے کو قوم کی نئی نسل تک منتقل کریں ۔ مجھے یہ جان کر خوشی محسوس ہوئی ہے کہ این ای ڈی یونیورسٹی کے بین الاقوامی تعلیمی اداروں کے ساتھ قریبی روابط ہیں جو کہ نوجوان نسل کو دور حاضر کی ٹیکنالوجی حاصل کرنے میں سود مندثابت ہورہی ہے۔ گورنر سندھ نے طلباءو طالبات کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ملک کو آپ لوگوں سے بہت توقعات وابستہ ہیں اور میں چاہتا ہوں کہ آپ اپنی صلاحیتوں کو بروئے کار لاتے ہوئے ملک کی تعمیر و ترقی میں اپنا بھرپور حصہ ڈالیں۔ گورنر سندھ نے اس بات کی بھی یقین دہانی کروائی کہ حکومت این ای ڈی یونیورسٹی کو تعلیمی منصوبوں ، تحقیق اور ترقیاتی پروگرامز میں مدد فراہم کرنے میں معاونت جاری رکھے گی۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے شیخ الجامعہ پروفیسر ڈاکٹر سروش حشمت لودھی نے بتایا کہ ہم اب تک پاکستان کی واحدجامعہ ہیں جہاں چینی زبان کی تعلیم لازمی ہے جوکہ مستقبل میں انجینئرز کے لیے انتہائی سودمند ثابت ہوگی۔ انہوں نے بتایا کہ جلسہ تقسیم اسناد2019 میں 13طالب علموں کو ڈاکٹریٹ کی سند جبکہ امتیازی نمبر حاصل کرنے والے 27طلبا و طالبات کو گولڈ میڈلز دیا گیا۔ انہوں نے مزید بتایا کہ جامعہ این ای ڈی سے اس برس پاس آﺅٹ گریجویٹس کی کُل تعداد 2113 جبکہ ماسٹرز کی تعداد 843 ہے۔