گورنر سندھ عمران اسماعیل کی ڈاو یونیورسٹی آف ہیلتھ اینڈ سائنسز میں دسواں سالانہ تقریب تقسیم اسناد میں شرکت 
تقریب میں وائس چانسلر پروفیسر محمد سعید قریشی، پرو وائس چانسلر زرناز واحد، پروفیسرز، رجسٹرار، اور طالبعلموں کی بڑی تعداد شریک تھی
تقریب میں 1349 طلبا و طالبات کو گریجویشن، پوسٹ گریجویٹ، ڈپلومہ اور ڈاکٹریٹ کی ڈگریاں تفویض جبکہ دو طالب علموں کو پی ایچ ڈی کی ڈگریاں دی گئیں 
اعلی کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے 27 طالبعلموں کو سونے، 27 کو چاندی اور 27 کو کانسی کے تمغوں سے نوازا جائیگا
آپ خوش قسمت طالبعلم ہیں جو یہاں موجود ہیں اور آپ سے زیادہ والدین خوش قسمت ہیں جنکی خواہش پوری ہوئی ہے۔ گورنرسندھ
آپکی ذمہ داری ہے کہ یہاں سے جاکر اپنے ملک کے لئے خدمات انجام دیں ۔ گورنرسندھ
حکومت پاکستان نے کامیاب جوان کے نام سے اسکیم کا آغاز کیا ہے جس کے تحت ایک لاکھ سے پچاس لاکھ تک کا قرضہ فراہم کیا جارہا ہے۔ گورنرسندھ
جس سے اپنا کلینک کھول سکتے ہیں اپنی خدمات اس ملک اور عوام کو دے سکتے ہیں.

Governor Sindh attends death anniversary of former Federal minister Jam Mashooq Ali Khan.

Governor Sindh attends death anniversary of former Federal minister Jam Mashooq Ali Khan.

Governor Sindh Imran Ismail today attended special prayer for the departed soul of Late Jam Mashooq Ali who had passed away on November 26, 2018.

While paying tributes to Jam family and late Jam Mashooq Ali, Governor Sindh said he had a personal relationship with this family as they had rendered great sacrifices for the homeland.

______________________________________________________

نواز شریف کی تصاویر اور ویڈیو کلپس دیکھ کر افسوس ہوتاہے۔ گورنر سندھ

 لندن میں شاپنگ اور گھوم پھر رہے ہیںاب ان کے فالوورز کو فیصلہ کرنا ہے کہ ایسی لیڈر شپ چاہتے ہیں۔ جام نواز میں میڈیا سے گفتگو  

کراچی 26 نومبر

گورنر سندھ عمران اسماعیل نے کہا ہے کہ میاں نواز شریف کو لندن میں علاج کرانے کے بجائے واپس ملک آکر اپنے مقدمات کا سامنا کرنا چاہیے کیونکہ لندن کے بازاروں اور گلیوں میں وہ جس طرح رٹیل تھراپی کرا رہیں ہیں اس سے ان کا وقار گر رہا ہے جبکہ مولانا فضل الرحمان کے پلان اے اور بی کا سلسلہ اب پلان ڈی اور ایچ میں داخل ہوچکا ہے اور بہت جلد ان کا پلان زیڈ بھی آجائے گا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے آج ضلع سانگھڑ کے تعلقہ جام نواز علی میں سابق وفاقی وزیر جام معشوق علی کی برسی کی تقریب کے دوران میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔ گورنر عمران اسماعیل نے کہا کہ میاں نواز شریف بیماری کی وجہ بتا کر لندن گئے ہیں مگر لندن کے بازاروں اور گلیوں میں ان کی تصاویر اور وڈیوز دیکھ کر بہت افسوس ہو رہا ہے اور ایسا لگ رہا ہے کہ لندن کے بازاروں میں ان کی رٹیل تھراپی ہو رہی ہے اس سے اچھا ہے کہ نواز شریف واپس ملک آکر اپنے مقدمات کا سامنا کریں۔ انہوں نے کہا کہ نواز شریف لندن میں اسی گھر میں رہائش پذیر ہیں جو ملکیت انہوں نے تاحال اپنے اثاثوں میں ظاہر تک نہیں کی۔ انہوں نے کہا کہ نواز شریف کے ایسے اعمال دیکھ کر ان پر اندھا عقیدہ رکھنے والے ووٹرز کو بھی افسوس ہو رہا ہوگا اور وہ سوچ رہیں ہونگے کہ نواز شریف ہمیشہ مشکل وقت میں انہیں اکیلا چھوڑ کر ملک سے باہر چلے جاتے ہیں۔ مولانا فضل الرحمان کے ڈھرنے کے متعلق ایک سوال پر انہوں نے کہا کہ مولانا کا شو فلاپ ہو چکا ہے اور آج تک یہ پتا نہیں چل سکا کہ وہ کیوں دھرنے کے لئے آئے تھے اور واپس کیوں چلے گئے۔ انہوں نے کہا کہ دھرنے کے بعدسڑکیں بلاک کرنا ان کا پلان بی تھا مگر اب کا پلان ڈی اور ایچ مراحل میں داخل ہو چکا ہے اور بہت جلد ان کا پلان زیڈ بھی آجائے گا۔ ایک سوال پر گورنر عمران اسماعیل نے کہا کہ 18 وین ترمیم کے بعد ٹڈی دل سے بچاءکی لئے اسپری کرانا اور کتے کے کاٹنے سے بچاءکی ویکسین کا بندوبست کرنا صوبائی حکومتوں کا کام ہے مگر اس کے باوجود بھی سندھ کی وزیر نے ان سلسلے میں مدد کے لئے وفاق کو ایک خط بھی لکھا ہے۔ انہوں نے یقین دہانی کروائی کہ بہت جلد وفاقی حکومت ٹڈی دل سے بچاءکے لئے اسپری کرانے، کتے کے کاٹنے سے بچاءکی ویکسین، ایڈز اور پولیو کی بیماری سے بچاءکے لئے مزید اقدامات اٹھانے کے لئے مدد فراہم کرے گی جبکہ اس سلسلے میں عالمی ادارہ صحت سے بھی ایک معاہدہ ہوچکا ہے۔انہوں نے کہا کہ جام خاندان سے بہت پرانی وابستگی ہے ان سے ملنا جلنا رہتا ہے یہ وہ خاندان ہے جس نے پاکستان کے قیام میں نہ صرف ساتھ دیا بلکہ جہاں ضرورت پڑی وہاں قربانیاں بھی دیں تھی اور آج بھی یہ خاندان تیار رہتا ہے۔ اس موقع پر پاکستان پیپلز پارٹی کے ایم پی اے جام مدد علی، پاکستان تحریک انصاف کے رہنماءجام ذوالفقار علی، جام نفیس علی اور دیگر بھی موجود تھے۔